A+ R A-
26 مئی 2017
RSS Facebook Twitter Linkedin Digg Yahoo Delicious

Ads1

یوم تکبیر /سر فخر کیساتھ بلندکرنے کا دن

Written by 
Rate this item
(0 votes)

تحریر : کمال عبد الجمیل

سولہ  برس قبل آج ہی کے دن پاکستان اقوام عالم میں ایک نمایاں مقام حاصل کر لیا۔ یہ مقام چاغی میں ایٹمی دھماکے کرکے دنیا کے ساتویں اور امت مسلمہ کے پہلے ایٹمی طاقت بننے پر پاکستان کو حاصل ہوا۔ اسوقت کے وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف نے جب قوم سے اپنے خطاب میں یہ اعلان کردیا کہ پاکستان کہ یکے بعد دیگرے سات ایٹمی دھماکے کرکے ہندوستان سے حساب چکتا کر لیا ہے تو پاکستان بھر میں خوشی کی لہر دوڑ گئی ۔ شکرانے کے نوافل ادا کئے گئے، خصوصی تقریبات کا اہتمام کیا گیا ۔ ہر پاکستانی کے دل میں جوش اور ولولہ مزید تازہ ہوگیا ۔ امت مسلمہ کو بھی اپنے مد مقابل کے سامنے سر فخر کے ساتھ بلند کرنے کا موقع ہاتھ آیا۔
اس تاریخی دن کو " یوم تکبیر " کا نام دیکر ہر سال نہایت عقیدت اور جذبے کے ساتھ منایا جاتاہے۔ 28مئی 1998 ؁ء کوبلوچستان کے ضلعی چاغی کے پہاڑوں میں کئے گئے جوابی ایٹمی دھماکوں نے پاکستان کے دشمن بھارت کے دانت کھٹے کرنے کے ساتھ ساتھ صیہونی ریاست اسرائیل کو بھی واضح پیغام پہنچایا کہ اسلامی جمہوریہ پاکستان کو تاراج کرنے کے خواب دیکھنے والے دنیاکے نقشے سے مٹ جائینگے۔ یہی وجہ ہے کہ ہندوستان کے وہ بڑھتے ہوئے قدم جو پاکستان کی طرف گامزن تھے یکدم بیڑی بند ہوگئے۔ ہندوستان نے مئی 1998 ؁ء کے اوائل میں پوکھران میں ایٹمی دھماکے کرکے دھمال ڈالا تھا اور یکدم انکے لہجے میں ترشی اور جارحیت آگئی ۔ ہندوستانی وزراء پاکستان کو تہس نہس کرنے کے بیانات دینے لگے، ہندوستانی مسلح افواج کی حرکتوں میں غیر معمولی اضافہ دیکھنے میں آیا، بین الاقوامی سرحد اور لائن آف کنٹرول پر بھی ہندوستانی جارحیت ایکدم تیز تر ہوگئی اور پاکستان کی سالمیت کو شدید خطرات واضح نظر آنے لگے تو مجبوراً پاکستان کو تمام بین الاقوامی دباؤ کو رد کرتے ہوئے اپنے ایٹمی صلاحیتوں کو واضح کرنا پڑا۔ امریکہ کے صدر بل کلنٹن آخر ی لمحے تک وزیر اعظم پاکستان میاں نواز شریف کو ایٹمی دھماکوں سے باز رکھنے کی کوششیں کرتے رہے۔
اللہ تعالیٰ کے خصوصی فضل و کرم سے پاکستان ایٹمی قوت بن گیا اور نعرہ تکبیر کی صداؤں سے ایسا گونجا کہ ہندوستان کے پر لرزہ طاری ہو گیا۔ اسی وجہ سے اس دن کا نام بھی " یوم تکبیر"رکھا گیا۔ اس دن پر پورے پاکستانی قوم کو فخر ہے۔اس دن ملک بھر میں اس حوالے سے پروگرامات کا انعقاد کیا جاتا ہے اور مساجد میں پاکستان کی سلامتی اور خوشحالی کے لئے دعائیں بھی کی جاتی ہیں۔
پاکستان نے ایٹمی صلاحیت کے حصول کی کوششوں کا آغاز 1974 میں بھارت کی جانب سے ایٹمی دھماکے کرنے کے بعد کیا اور پھر 28 مئی 1998 میں پاکستان نے بلوچستان میں چاغی کے مقام پر ایٹمی دھماکے کر کے باقاعدہ طور پر ایک ایٹمی صلاحیت بننے کا اعزاز حاصل کیا۔ ایٹمی دھماکے کرنے کی وجہ سے پاکستان کو عالمی پابندیوں کو سامنا بھی کرنا پڑا لیکن اس کے باوجود پاکستان دنیا خود کو دنیا بھر میں ایک ذمہ دار ایٹمی ریاست کے طور پر منوایا۔ایٹمی دھماکوں کے بعد پاکستان نے ایٹمی صلاحیت میں مسلسل ترقی کی جو اس کے دشمنوں کو ایک آنکھ بھی نہیں بھاتی اور پاکستان دشمن قوتیں اب بھی پاکستان کے ایٹمی پروگرام کے پیچھے لگے ہوئے ہیں۔

Read 2046 times Last modified on بدھ, 28 مئی 2014 07:34
Login to post comments

چارسده فیس بک پر لائک کریں

چارسده فوٹو گیلری

Advertisement