A+ R A-
30 اپریل 2017
RSS Facebook Twitter Linkedin Digg Yahoo Delicious

Ads1

لندن: فضائی سفر کو تیز رفتار بنانے کے بعد سائنسدان اس فکر میں لگ گئے کہ زمینی سفر کو کیسے تیز تر بنایا جائے اس کے نتیجے میں  بلٹ ٹرین میدان میں آگئیں تاہم اب آگئی ہے سپرسونک کار جسے جلد ہی سڑکوں پر دوڑتے دیکھا جاسکے گا۔

 

اس کار کو ’’بلڈ ہاؤنڈ‘‘ یعنی خونخوار کتے  کا نام دیا گیا ہے۔ لندن میں اس کو حتمی شکل دینے والے برطانوی انجینئرز کا عزم ہے کہ وہ وہ اس کار کو 2015 تک مکمل کر لیں گے اور اس کی رفتار ہوگی حیرت انگیز یعنی 1000 میل یا 1600 کلو میٹر فی گھنٹہ   اور یہ رفتار کسی جہاز سے کم نہیں۔

 

کار کا کاک پٹ تیار کر لیا گیا ہے جو جہاز کے کاک پٹ کی طرزپر ڈیزائن کیا گیا ہے جبکہ اس کا اسٹیرنگ عام کاروں سے کچھ مختلف ہے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ دنیا کی یہ تیز ترین کار ٹائروں پر نہیں بلکہ 200 پاؤنڈز وزنی سرکلز پر دوڑے گی جو کہ ایرواسپیش المونیم سے تیار کیئے گئے ہیں۔ جو 50000ہزار گنا قوت ثقل کو جذب کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔

 

کار کا انجن راکٹ ریس انجن اور فائٹر جیٹ کے ملاپ سے بنایا گیا ہے جب کار اسٹارٹ ہوگی تو عام کار کے مقابلے میں یہ انجن چھ گنا زیادہ طاقت سے کار کو چلا ئے گا،اس کے پہلے آزمائشی سفر کے ڈرائیور اینڈی گرین کا کہنا ہے کہ یہ کار برطانوی انجیئرنگ کا ایک شاہکار ہے۔ جب یہ تیار ہو کر سامنے آئے گی تو دینا کو حیران کردے گی۔

Published in ٹیکنالوجی

چارسده فیس بک پر لائک کریں

چارسده فوٹو گیلری

Advertisement